اب ہوگا دمادم مست قلندر:اہم ترین سیاسی شخصیت نے اسلام اباد میں دھرنے کا اعلان کر دیا

اسلام آباد ( مانیٹرنگ ڈیسک ) فاٹا سے تعلق رکھنے والے رکن قومی اسمبلی شاہ جی گل آفریدی نے فاٹا اصلاحات میں تاخیر پر رمضان کے بعد اسلام آباد کے ریڈ زون میں دھرنے کا اعلان کردیا۔

تفصیلات کے مطابق  اسلام آباد میں منعقدہ سیمینار میں ڈان نیوز سے سائیڈ لائن بات کرتے ہوئے شاہ جی گل آفریدی نے کہا کہ ’حکومت فاٹا اصلاحات سے اپنے وعدے کی پاسداری میں ناکام رہی اس لیے فاٹا کے عوام دھرنا دے کر اسلام آباد کو مفلوج کردیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ’وہ تمام ادارے جو ملک کے دیگر حصوں کے لیے تو کام کرتے ہیں لیکن فاٹا کے لیے نہیں، انہیں مفلوج کردیا جائے گا جبکہ وزیر اعظم سیکریٹریٹ کی طرف جانے والی سڑکیں بھی بلاک کردی جائیں گی۔رکن قومی اسمبلی کا کہنا تھا کہ ’دھرنا اسلام آباد کے ریڈ زون میں دیا جائے گا جسے ’قبائلی تحریر اسکوائر‘ کا نام دیا جائے گا، قبائلی عوام کا دھرنا تاریخی ہوگا اور لوگ ٹائم اسکوائر کے دھرنے کو بھول جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ’دھرنے میں شرکت کے لیے رمضان کے دوران فاٹا سے تعلق رکھنے والے تمام ارکان پارلیمنٹ سے رابطہ کیا جائے گا، جبکہ دھرنے کی تاریخ کا اعلان جلد کیا جائے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ قبائلی عوام کا یہ دھرنا اس وقت تک ختم نہیں ہوگا جب تک ان کے تمام مطالبات مان نہیں لیے جاتے۔شاہ جی گل آفریدی نے کہا کہ ’اگر ضرورت پڑی تو قبائلی عوام ایک دہائی تک بھی دھرنا دے سکتے ہیں، کیونکہ وہ پہلے ہی مشکل حالات میں رہنے کے عادی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ان کا بنیادی مطالبہ فاٹا کا خیبر پختونخوا سے انضمام ہے۔ان کا کہنا تھا کہ قومی اسمبلی میں زیر التوا فاٹا اصلاحات کا بل منظور ہونا چاہیئے اور خیبر پختونخوا اسمبلی میں فاٹا کے لیے نشستیں مخصوص کی جانی چاہیئں۔واضح رہے کہ وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقوں (فاٹا) کے نمائندگان اور اہم سیاسی جماعتوں نے فاٹا اصلاحات کے نفاذ میں مزید تاخیر ہونے پر اسلام آباد میں دھرنے کی دھمکی دی تھی۔(م۔ش۔ع)

About VOM URDU

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.