امریکہ میں ہم جنس پرستوں کے نائٹ کلب میں فائرنگ، 50 افراد ہلاک، 53 زخمی، حملہ آور بھی مارا گیا ، شناخت عمر متین کے نام سے ہو گئی

اورلینڈو (مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی شہر اورلینڈو میں ہم جنس پرستوں کے نائٹ کلب میں فائرنگ کے نتیجے میں 50 افراد ہلاک اور 53 افراد زخمی ہو گئے جبکہ حملہ آور نے کلب میں موجود متعدد افراد کو یرغمال بنا لیا جسے بعدازاں پولیس نے کامیاب آپریشن کرتے ہوئے ہلاک کر دیا۔ حملہ آور نے اپنے جسم کے ساتھ ایک بم بھی باندھ رکھا تھا۔ ایف بی آئی نے واقعے کو دہشت گردی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ حملہ آور اسلامی انتہاءپسندی کے رجحانات سے متاثر ہو سکتا ہے۔ امریکی میڈیا نے دعویٰ کیا ہے کہ حملہ آور کی شناخت عمر متین کے نا م سے ہوئی ہے جو افغان نژاد امریکی شہری ہے۔
برطانوی ٹی وی سکائی نیوز  کے مطابق امریکی ریاست فلوریڈا کے شہر اورلینڈو میں واقع ہم جنس پرستوں کے نائٹ کلب ”Pulse Night Club” میں مسلح شخص نے گھس کر فائرنگ کر دی جس کے نتیجے میں 50 افراد ہلاک ہو گئے اور کم از کم 53 افراد زخمی ہوئے جبکہ مسلح شخص نے کلب میں موجود متعدد افراد کو کئی گھنٹوں تک یرغمال بنائے رکھا۔ غیر ملکی خبر ایجنسی کے مطابق پولیس نے کامیاب آپریشن کرتے ہوئے حملہ آور کو ہلاک کر دیا ہے اور کلب میں موجود تمام افراد کو باہر نکال لیا گیا ہے۔ مسلح شخص نے جیسے ہی نائٹ کلب میں گھس کر فائرنگ کا سلسلہ شروع کیا تو نائٹ کلب انتظامیہ نے اپنے فیس بک پیج پر پیغام جاری کیا کہ ”کلب میں موجود تمام شخص نکل جائیں اور بھاگتے رہیں“۔
ایک ٹوئٹر صارف نے اس واقعے کے کچھ ہی دیر بعد لکھا کہ ”مجھے ذرائع نے بتایا ہے کہ مسلح شخص نے جسم پر بم بھی باندھ رکھا ہے اور اس نے 20 افراد کو گولیاں مار کر زخمی کر دیا ہے“۔ اورلینڈ نیوز کے ایک رپورٹر نے بھی اپنے ٹوئٹر اکاﺅنٹ پر جاری پیغام میں کہا کہ ”حملہ آور نے اپنے ساتھ بم باندھ رکھا ہے اور متعدد افراد کو زخمی کر دیا ہے“۔

واقعے کی اطلاع ملنے پر پولیس کی بھاری نفری موقع پر پہنچ گئی اور اردگرد کے علاقے کو خالی کرا کر نائٹ کلب کی عمارت کا محاصرہ کر لیا۔ پولیس نے کامیاب آپریشن کرتے ہوئے حملہ آور کو منطقی انجام تک پہنچا دیا ہے۔ اورلینڈو پولیس چیف کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ نائس کلب میں فائرنگ کے واقعے میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد بڑھ رہی ہے جبکہ حملہ آور بھی پولیس کے ساتھ فائرنگ کے تبادلے میں ہلاک ہو چکا ہے۔
ا ایف بی آئی نے اس حملے کو دہشت گردی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ حملہ آور اسلامی انتہاءپسندی کے رجحانات سے متاثر ہو سکتا ہے۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے میل آن لائن نے دعویٰ کیا ہے کہ پولیس اور ایف بی آئی دہشت گردی کے حوالے سے غور کر رہے ہیں۔ امریکی میڈیا کے مطابق حملہ آور کی شناخت عمر متین کے نام سے ہوئی ہے جو افغان نژاد امریکی فوجی ہے۔

About وائس آف مسلم

Voice of Muslim is committed to provide news of all sort in muslim world.

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

Read Next

ăn dặm kiểu NhậtResponsive WordPress Themenhà cấp 4 nông thônthời trang trẻ emgiày cao gótshop giày nữdownload wordpress pluginsmẫu biệt thự đẹpepichouseáo sơ mi nữhouse beautiful