’باتوں کا غلط مطلب نہ لیں، فوج کا دشمن نہ سمجھیں‘

متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین نے کہا ہے کہ وہ حلفیہ طور پر کہتے ہیں کہ ایم کیو ایم کا بھارتی ایجنسی ’را‘ سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

پیر کی شب ایم کیو ایم کے گڑھ، لال قلعہ گراؤنڈ عزیز آباد میں پارٹی کارکنوں کے ایک اجتماع سے ٹیلی فونک خطاب کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ ’را‘ پاکستان کی دشمن ہے اور جو پاکستان کا دشمن ہے ایم کیو ایم اس کی دشمن ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ’تمام تر مظالم کے باوجود میں یقین دلاتا ہوں کہ اگر بھارت یا را نے پاکستان کے خلاف کوئی منصوبہ بندی کی اور پاکستانی فوج کو بھارت سے لڑنا پڑا تو ایم کیوایم کے کارکنان، پاکستان کے دفاع کے لیے پاک فوج کے شانہ بشانہ لڑنے کے لیے تیار ہیں۔‘

انھوں نے کہا کہ مہاجروں کے ساتھ قیام پاکستان کے وقت سے ہی تعصب اور عصبیت کا مظاہرہ کیا جاتا رہا ہے۔

الطاف حسین نے کہاکہ اگر ہمارے صفوں میں سماج دشمن عناصر کی موجودگی کی اطلاع ہے تو ہمیں اعتماد میں لیا جائے، ہم ایسے عناصر کو اپنی تحریک سے نکال دیں گے۔

ان کے بقول جرائم پیشہ عناصر کے لیے ایم کیوایم میں کوئی گنجائش نہیں ہے۔ بھتہ خوری، سٹریٹ کرائمز، اغواء کی وارداتوں، چوری چکاری اور زبردستی زکوٰۃ، فطرہ یا کھالیں جمع کرنا ان کی تعلیمات نہیں ہیں۔

انھوں نے کہا کہ اگر کسی کو ایم کیوایم کیں صفوں میں کسی مجرم کا علم ہے تو ثبوت فراہم کرے۔ ثبوت کی روشنی میں ایسے شخص کو پارٹی سے نکال دیا جائے گا۔ پھر بھلے اسے گرفتار کر کے عدالت میں پیش یا جائے انہیں کوئی اعتراض نہیں ہوگا۔

الطاف حسین نے کہا کہ غلط حرکتوں کی بناء پر ہزاروں افراد کو ایم کیو ایم سے نکالا گیا ہے۔

الطاف حسین نے یہ بھی کہا کہ ’ٹیلی ویژن پر جو افراد ایم کیو ایم کے خلاف گمراہ کن خبریں نشر کر رہے ہیں انہیں خیال رکھنا چاہیے کہ وہ جن کی سپورٹ پر یہ عمل کر رہے ہیں وہ کل اپنی اپنی پوسٹوں پرنہیں رہیں گے جبکہ آپ اور ہمیں ایک ساتھ ہی رہنا ہے۔‘

الطاف حسین نے کہا کہ ایم کیو ایم کا میڈیا ٹرائل کیاجا رہا ہے اور اسے بھارت اور را کا ایجنٹ ثابت کرنے کی سازش کی جا رہی ہے۔

انھوں نے آرمی چیف جنرل راحیل شریف ، ڈی جی آئی ایس آئی جنرل رضوان اختر اور ڈی جی رینجرز میجر جنرل بلال کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ’آپ میری باتوں کاغلط مطلب نہ لیں، ہمیں فوج کا دشمن نہ سمجھیں۔‘

الطاف حسین نے خبردار کیا کہ اگر ’مائنس الطاف‘ فارمولے کے تحت انھیں سازش کے ذریعہ قیادت سے ہٹایا گیا تو کروڑوں مہاجر تو کجا اس اجلاس کے شرکاء تک کو ایک پرچم تلے متحد نہیں رکھا جا سکے گا اور یہ مجمع ٹکڑیوں میں بٹ کر اپنے طور پر فیصلے کرنے لگے گا۔

انھوں نے کہا کہ ’یہ کوئی دھمکی نہیں ہے بلکہ یہ سمجھانے کی کوشش ہے کہ ابھی قوم ایک پرچم تلے متحد ہے اور اپنے قائد پر یقین رکھتی ہے۔ انھوں نے کہا کہ اگر مجھے حملہ کر کے، قتل کرکے یا سازش کر کے قیادت سے ہٹایا گیا تو عوام کو سمجھانے والا کون ہوگا؟ ‘

الطاف حسین نے مزید کہا کہ ’کراچی میں آپریشن کے نام پر ایم کیوایم کو طاقت کے ذریعے کچلنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔‘

انھوں نے عمران خان کی طرز کے دھرنے کا عندیہ دیتے ہوئے کہا کہ ایم کیو ایم کی رابطہ کمیٹی غور کر رہی ہے کہ موجودہ کارروائیوں کے خلاف دھرنے کا اعلان کیا جائے۔

انھوں نے پارٹی کے کارکنوں اور ذمہ داروں سے کہا کہ وہ ممکنہ دھرنے کی تیاری کر لیں۔

الطاف حسین نے یہ حظاب ایسے وقت کیا ہے جب کہ ان کی جماعت کو پاکستان میں سکیورٹی فورسز کی کارروائیوں، اور برطانیہ میں منی لانڈرنگ کے الزام میں پولیس کی تفتیش کا سامنا ہے۔

About VOM

Voice of Muslim is committed to provide news of all sort in muslim world.

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

Read Next

ăn dặm kiểu NhậtResponsive WordPress Themenhà cấp 4 nông thônthời trang trẻ emgiày cao gótshop giày nữdownload wordpress pluginsmẫu biệt thự đẹpepichouseáo sơ mi nữhouse beautiful