سعودی عرب میں خواتین کو بلیک میل کرنیوالے زیادہ ترکس کس چیز کا مطالبہ کرتے ہیں، شرمناک تفصیلات سامنے آگئیں

ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک )سعودی عرب میں خواتین کو بلیک میل کرنیوالے زیادہ ترکس چیز کا مطالبہ کرتے ہیںاور اکثر متاثرہ خواتین کی عمریں اور معاشرے میں ان کا سٹیٹس کیا ہوتا ہے اس حوالے سے شرمناک تفصیلات سامنے آگئیں ہیں ۔خواتین کو بلیک میل کرنے والے سب سے زیادہ سوشل میڈیا اور موبائل فونز کا سہارا لیتے ہیں اور ان کی ناقابل اشاعت تصاویر اور ویڈیو ز حاصل کرنے کی کوشش کرتے ہیں تاکہ ان کے سہارے جو چاہیں جیسے چاہیں حاصل کر لیں ۔
کمیشن برائے نیکی کا فروغ اور برائی کی روک تھام ” حیا“کے سربراہ عبدالرحمان ال سناد نے دارالحکومت ریاض میں منعقدہ انٹرنیشنل کمپیوٹر کرائم کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ خواتین کو بلیک میل کرنے والے 74فیصد مرد ان سے جنسی تسکین فراہم کرنے کا مطالبہ کرتے ہیں ۔ 14فیصد مرد بلیک میلرز رقم جبکہ 12فیصد دیگر ملے جلے مطالبات کرتے ہیں ۔ عبدالرحمان ال سناد نے بتایا کہ ان بلیک میلرز میں تقریباََ 60فیصد غیر شادی شدہ ہیں اور 20فیصد شادی شدہ ہیں ۔انہوں نے بتایا کہ 33فیصد متاثرہ خواتین کی عمریں 21سے 25سال کے درمیان دیکھی گئی ہیں ،32فیصد کی عمریں 16سے 20جبکہ 20فیصد خواتین کی عمر 26سے 30سال کے درمیان ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ بلیک میلرز کے ہاتھوں یرغمال ہونے والی متاثرہ خواتین میں سے 58فیصد کنواری ہیں جبکہ 26فیصد شادی شدہ اور 15فیصد طلاق یافتہ اور منگنی والی ہیں ۔ تعلیمی نقطہ نظر سے دیکھا جائے تو پتہ چلتا ہے کہ متاثرہ خواتین میں سے 41فیصد نے محض اپنی سکینڈری سکول ایجوکیشن مکمل کر رکھی ہے جبکہ 40فیصد یونیورسٹیوں سے گریجویٹ ہیں اور 6فیصد کی تعلیمی قابلیت انٹرمیڈیٹ ہے ۔ انہوں نے ان متاثرہ خواتین کے چنگل میں پھنسنے کی وجوہات پر بھی روشنی ڈالتے ہوئے بتایا ہے کہ 22فیصد خواتین کا بلیک میلرز سے رشتہ سوشل میڈیا کے ذریعے شروع ہوا جبکہ 21فیصد سمارٹ فون اپیلی کیشنز اور دیگر شکار بننے والی خواتین رانگ کالز ، مس بلز ، میرج ویب سائٹس وغیرہ سے گھیرے میں آئیں۔ حیا کے سربراہ نے بتایا کہ سعودی ریاست میں خواتین کو ہراساں کرنے والے بلیک میلرز نے متاثرہ خواتین کی انتہائی ذاتی نوعیت کی معلومات اور نجی تصاویر کو بطور آلہ استعمال کیا ۔ انہوں نے بتایا کہ خواتین کو ہراساں کرنے والے بلیک میلرزکیلئے سخت سزائیں مقرر ہیں جن میں 10سال سے زائد قید اور 5ملین سعودی ریال سے زائد کے جرمانے کی سزا شامل ہے ۔

About وائس آف مسلم

Voice of Muslim is committed to provide news of all sort in muslim world.

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

Read Next

ăn dặm kiểu NhậtResponsive WordPress Themenhà cấp 4 nông thônthời trang trẻ emgiày cao gótshop giày nữdownload wordpress pluginsmẫu biệt thự đẹpepichouseáo sơ mi nữhouse beautiful