سعودی عرب کی حمایت طاہر اشرفی کو مہنگی پڑ گئی۔

پاکستان کی اسلامی نظریاتی کونسل کے اجلاس میں کونسل کے سربراہ مولانا محمد خان شیرانی اور کونسل کے رکن  طاہر اشرفی میں شدید جھڑپ ہوئی جس کے نتیجے میں دونوں کے گریبان کے بٹن ٹوٹ گئے۔ اطلاعات کے مطابق مطابق مولانا محمد خان شیرانی اور  طاہر اشرفی کے درمیان جھڑپ اجلاس میں پیش کیے گئے ایجنڈے پر ہوئی ۔میڈیا رپورٹس کے مطابق  ایجنڈے میں پوائنٹ نمبر 13 قادیانوں کے غیر مسلم ہونے کے حوالے سے تھا جس میں کہا گیا تھا کہ یہ نقطہ  طاہر اشرفی کے کہنے پر ڈالا گیا ہے.جبکہ مولانا شیرانی نے کہا کہ قادیانی پاکستان کے آئین کے تحت غیر مسلم ہیں.جس پر دونوں میں تلخ کلامی شروع ہوگئی اور نوبت ہاتھا پائی تک پہنچ گئی کونسل کے دیگر ارکان نے بڑی مشکل سے دونوں علماء کو الگ کیا اس دوران علماء کے گریبان کے بٹن بھی ٹوٹ گئے۔ ذرائع کے مطابق کل مولانا شیرانی نے سعودی عرب پر تنقید کرتے ہوئے کہا تھا کہ سعودی عرب کا اسلامی فوجی اتحاد امریکہ کے مفاد میں ہے اور سعودی عرب کے اسلامی فوجی اتحاد پر امریکہ بہت خوش ہے۔  طاہر اشرفی جو سعودی عرب کے بہت بڑے حامی اورطرفدار ہیں ، انھوں نے قادیانیوں کو بہانہ بنا کر آج مولانا شیرانی کو اپنے ہاتھ دکھانے کی کوشش کی لیکن  اشرفی کو مولانا شیرانی کے سخت ہاتھوں کا سامنا کرنا پڑ گیا اور سعودی عرب کی حمایت ملا اشرفی کو مہنگی پڑ گئی۔

About وائس آف مسلم

Voice of Muslim is committed to provide news of all sort in muslim world.

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

Read Next

ăn dặm kiểu NhậtResponsive WordPress Themenhà cấp 4 nông thônthời trang trẻ emgiày cao gótshop giày nữdownload wordpress pluginsmẫu biệt thự đẹpepichouseáo sơ mi nữhouse beautiful