شام اور عراق میں داعش کیساتھ امریکی تعاون کی دستاویزات جاری

ان دستاویزات سے جنوری 2016ء سے جولائی تک شام اور عراق کے اندر کئے گئے مختلف آپریشنز میں 3 امریکی سینیئر بحری فوجی کمانڈروں کے ہلاک ہونے کے بارے میں بھی پتہ چلتا ہے۔ اس وقت اس ملک کے سابق صدر بارک اوباما کا دور تھا۔ یہ موضوع ان کی اور امریکی وزارت دفاع کے دوسرے سینیئر رہنماوں کی طرف سے جاری شدہ اعلانیہ بیانات سے متصادم ہے، جس میں وہ دہشت گرد گروہ داعش کے خلاف براہ راست آپریشن میں امریکی افواج کی موجودگی سے انکار کرتے تھے۔ لیکن اس سب کے باوجود پیش آنے والی ذلت اس موضوع سے کہیں زیادہ ہے اور ان دستاویزات سے ظاہر ہوتا ہے کہ اس دور میں امریکی فوج کے داعش کے کئی سرغنوں کے ساتھ براہ راست روابط تھے اور وہ ان کے ساتھ مذاکرات کر رہے تھے۔ امریکہ کی بحری فوج نے ان دستاویزات سے ان تمام ناموں حذف کر دیا ہے، تاکہ یہ نام اسی طرح سے مخفی باقی رہیں۔ امریکی فوجی رہنماوں نے ابھی تک ان کارروائیوں کی نوعیت کے بارے میں کوئی اشارہ نہیں کیا ہے، لیکن شائع شدہ مطالب سے جو بات ثابت ہوتی ہے وہ یہ ہے کہ شام اور عراق میں خفیہ امریکی سازشیں موجود تھیں۔

About A. H

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

Read Next

ăn dặm kiểu NhậtResponsive WordPress Themenhà cấp 4 nông thônthời trang trẻ emgiày cao gótshop giày nữdownload wordpress pluginsmẫu biệt thự đẹpepichouseáo sơ mi nữhouse beautiful