قلم کار تا جو کے سوالات

ڈرتے نہیں ہیں دیکھ کر جلاد کی صورت
زنداں میں چلے جا تے ہیں سید سجادؑ کی صورت
کیا امام سجاد ؑ نے یزید وقت سے اپنی رہا ئی کی اپیل کی تھی ؟
کیا امام حسین ؑ نے یزید وقت کے ہاتھ بیت کر کے اس کے شورا کا حصہ بنا تھا یا اپنا سر دیا تھا ؟
ہمارے سامنے اس طر ح کے بہت سے اسلا می روایات ہیں لیکن ان پہ عمل پیرا ہو نے کے بجائے یہود و نصرٰ ی کے فیل و قول پہ چلنے کی کوشش کر رہے ہیں ۔حالانکہ قرآن میں واضح لکھا ہوا ہے کہ یہود و نصرٰی آپ کے دوست نہیں ہیں اس لیئے ان سے دوستی نہیں رکھو ۔
بابا جان کے االیکشن میں حصہ لینے سے گلگت بلتستان کے عوام کی محکو میت اور مظلو میت کا خاتمہ ہو گا ؟
باباجان الیکشن میں بھا ری اکثر یت سے جیت کر بھی مظلومیت اور محکو میت کا خاتمہ کر سکتا ہے ؟
باباجان گھوڑوں اور گدھوں کی اس قرارداد پاس ، کلوٹ ساز اسمبلی کا ممبربن کر حقوق دلا سکتا ہے ؟
یا ایک اور گدھے یا گھوڑے کی گنتی میں اضا فہ ہو گا ۔
یا باباجان کے کچھ ذاتی مسا ئل حل ہو نگے ۔
ہم قطعی طور پر باباجان کی قر با نیوں کو فراموش نہیں کر تے لیکن اس کی قر با نیوں کا صلہ یہ اسمبلی نہیں دے سکتی ہے اور نہ ہی بابا جان نے اس اسمبلی کے ممبر بننے کے لیئے قربانی دی ہے ۔ پھر بابا جان کو ایسی کیا مجبوری ہے جس کے تحت اس ڈھکو سلہ اسمبلی کا ممبر بننا چا ہتا ہے ۔ یہ روز روشن کی طر ح عیاں ہے کہ اس اسمبلی کا ممبر بننے والے بڑے بڑے دعوے کر کے تنخواہ تک محدود ہو گئے ہیں ہم اپنے تجر بے کے ساتھ اس اسمبلی کی حیثیت بتلا رہے ہیں اس اسمبلی کا ممبر بننا باباجان کی سیا سی موت ہو گی اور جو باباجان کو اس دلدل میں دھکیل رہا ہے وہ باباجان کو ہیرو سے زیرو بنا نے کی کو شش کر رہا ہے ۔
جبکہ بابا جان ایک سو شلسٹ تنظیم کا ورکر ہے جس کا ایک ایسا نظر یہ ہے کہ تمام اقوام عالم کو یکسا نظام ملنا چا ہیئے ہے ۔ جس کے لیئے انگریزوں ، یہودیوں کے روایات کی ترویج کے ساتھ اس پہ کام کیا جارہا ہے تا کہ ایک سو شلسٹ نظام گلگت بلتستان میں بھی قائم ہو ۔ جبکہ ایسا نہیں ہو سکتا ہے صرف نوجوانوں کے اذہان خراب ہو سکتے ہیں ۔ گلگت بلتستان کے عوام کا مقدمہ تمام اقوام عالم سے الگ ہے ۔
اسلام جو کہ ایک ایسا مذہب ہے جس میں تمام اقوام عالم کو برابری کا در جہ دیتا ہے اور اسلام میں ہی اپنے حقوق کی تحریک ہے ایک سو شل نظام ہے اور ظالم کے سامنے ڈٹ جا نا ہی اسلام کے روایات میں ہے ۔ مظلوم کا ساتھ دینے کے ساتھ ظلم کے خلاف بر سر پیکار ہو نے کا درس بھی اسلام اور قرآن دیتا ہے ۔
ہم نے ان غلطیوں کی نشاندہی کی ہے جو کہ ہماری نئی نسل کے لیئے انتہا ئی مضر ہے اس کو کو ئی بھی اپنا ذا تی مسئلہ یا انا پہ آنے کے بجا ئے غور کرے اور ہر بات کی وضا حت دلیل سے کر ے تا کہ عوام میں بھی کچھ شعور حا صل ہو ۔شکر یہ

کر بلا آج بھی ہے ایک لگا تار پکار
ہے کو ئی پیروی ابن علی ؑ پہ تیار

ایس یو ثاقب

About وائس آف مسلم

Voice of Muslim is committed to provide news of all sort in muslim world.

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

Read Next

ăn dặm kiểu NhậtResponsive WordPress Themenhà cấp 4 nông thônthời trang trẻ emgiày cao gótshop giày nữdownload wordpress pluginsmẫu biệt thự đẹpepichouseáo sơ mi nữhouse beautiful