تازہ ترین

پرویز مشرف نے دھماکہ کر دیا

اتوار کے روز پاکستان کے ایک نجی ٹیلی ویژن چینل پر سابق صدر اور جنرل (ریٹائرڈ) پرویز مشرف کے ایک دھماکہ خیز انٹرویو پر پاکستانی ذرائے ابلاغ نے بہت حد تک خاموشی اختیار کی ہے لیکن بھارت اور دوسرے ممالک میں اس انٹرویوپر ایک ہنگامہ اٹھ کھڑا ہوا ہے۔ قرائن سے معلوم ہوتا ہے کہ اس انٹرویو کے کچھ حصوں سے حکومت پاکستان کا عالمی موقف کمزور ہو گا اور سفارتی حلقوں کو ان بیانات کی وضاحت میں خاصی دقت پیش آئے گی۔ معروف صحافی وجاہت ایس خان کو دئے گئے اس انٹر ویو میں جنرل (ریٹائرڈ) پرویز مشرف نے اعتراف کیا تھا کہ پاکستان کی حکومت نے 1980 اور پھر 1990ءکی دہائیوں میں لشکر طیبہ سمیت دس سے بارہ جہادی تنظیموں کو تربیت دی، اسلحہ فراہم کیا اور انہیں سرحد پار جانے میں مدد دی۔ ایک سوال کے جواب میں جنرل (ریٹائرڈ) پرویز مشرف نے کہا ، ”ہمارے ملک کا ماحول 1979ءسے تبدیل ہوتا چلا آ رہا ہے۔ ہم نے ایک ایک مذہبی میلیٹینسی (ہتھیار بند جدوجہد ) پاکستان کے حق میں متعارف کرائی سوویت یونین کو نکالنے کے لئے ۔ ہم مجاہدین لائے پوری دنیا سے ۔
ہم نے طالبان کو تربیت دی۔ انہیں ہتھیار دیے۔ انہیں اندر بھیجا۔ وہ ہمارے ہیرو تھے ۔ یہ جو حقانی (جلال الدین) ہے ۔ ہیرو تھا ہمارا۔ 80s کا ہیرو تھا ، اسامہ بن لادن ہمارا ہیرو تھا۔ الزواہری بھی ہمارا اثاثہ تھا۔ وہ الگ ماحول تھا۔ اب ماحول تبدیل ہو گیا ہے۔ اب جو ہیرو تھے ، وہ ولین بن گئے ہیں۔ جہاں تک حافظ سعید وغیرہ کا تعلق ہے تو 1990ءمیں کشمیر میں آزادی کی جد و جہد شروع ہوئی۔ وہاں ان لوگوں کو بری طرح مارا گیا ، انڈین آرمی نے انہیں مارا۔ وہ بھاگ کر پاکستان آ گئے۔ پاکستان میں ان کو باقاعدہ ہیرو کا رتبہ دیا گیا۔ پاکستان میں ان کی تربیت بھی ہوتی تھی۔ ہم انہیں سپورٹ کرتے تھے کہ یہ لوگ مجاہدین ہیں جو انڈین آرمی سے لڑیں گے اپنے حقوق کے لئے۔ اس موقع پر لشکر طیبہ قائم ہوئی اور بھی بہت سی دس بارہ تنظیمیں بنیں۔ یہ سب ہمارے ہیرو تھے۔ کشمیریوں کے لئے اپنی جان پر کھیل کر لڑ رہے تھے۔ اب ماحول بدل گیا ہے ۔ اب Terrorism ہو رہا ہے۔ ہمارے ہاں بم بلاسٹ کر رہے ہیں۔ ہمیں مار رہے ہیں؟ اور ان میں انہی تنظیموں کے لوگ شامل ہو گئے۔ تو اس لئے یہ نیگیٹو ہو گیا۔ تو اس وقت ان کو بالکل کنٹرول کرنا چاہیے، بند کرنا چاہیے۔ جب جنرل (ریٹائرڈ) پرویز مشرف سے سوال کیا گیا کہ کیا حافظ سعید اور لکھوی کو بند کرنا چاہیے ؟ تو انہوں نے جواب دیا ”No Comments“۔
بھارت میں قومی سلامتی کے مشیر اجیت ددول نے جنرل (ریٹائرڈ) پرویز مشرف کی طرف سے حافظ سعید اور اسامہ کو ہیرو قرار دینے کو انتہائی شرمناک اور پاکستان کے ریاستی موقف کے منافی قرار دیا ہے۔ انڈین نیشنل کانگرس اور بھارتیہ جنتا پارٹی نے بھی جنرل (ریٹائرڈ) پرویز مشرف پر سخت تنقید کی ہے۔

About وائس آف مسلم

Voice of Muslim is committed to provide news of all sort in muslim world.

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

Read Next

ăn dặm kiểu NhậtResponsive WordPress Themenhà cấp 4 nông thônthời trang trẻ emgiày cao gótshop giày nữdownload wordpress pluginsmẫu biệt thự đẹpepichouseáo sơ mi nữhouse beautiful