کشمیری عوام کا پیدائشی حق طاقت کے بل بونے پر کچلنا ناممکن ہے، سید علی شاہ گیلانی

مسئلہ کشمیر کے حوالے سے بھارت کی طرف سے فوجی طاقت کے بے تحاشا استعمال، انتقام گیری اور تشدد کی سیاست سے اجتناب برتنے کی صلاح دیتے ہوئے جموں و کشمیر کل جماعتی حریت کانفرنس (گ) کے چیئرمین سید علی شاہ گیلانی نے بھارت کی موجودہ فرقہ پرست حکومت کے درپردہ آر ایس ایس کے سربراہ موہن بھگوت کے متکبرانہ بیان پر اظہارِ افسوس کیا۔ انہوں نے کہا کہ حقِ خودارادیت کا مطالبہ اقوامِ متحدہ کے انسانی حقوق کے تسلیم شدہ چارٹر کے عین مطابق کشمیری عوام کا ایک پیدائشی حق ہے، جسے طاقت کے بل بوتے پر کچلنا ناممکن ہے۔

حریت رہنما نے تاریخ کا حوالہ دیتے ہوئے موہن بھگوت کے بیان کو بھارت کی اب تک کی حکومتی پالیسی کا آئینہ دار قرار دیتے ہوئے کہا کہ بھارت نے پچھلے ستر سال کے دوران جموں کشمیر کی سرزمین کو خون ناحق سے لالہ زار بنادیا ہے، جیل خانوں کو محبوس حریت پسندوں سے آباد کرادیا، عورت ذات کی عزت و عصمت کو تار تار کرکے ایک مستقل جنگی ہتھیار کے طور پر استعمال کیا، زیرِ حراست گمشدہ افراد کی لاشوں سے اجتماعی مقبروں کو بھردیا اور جملہ انسانی حقوق کو پامال کردیا، لیکن ان انسانیت سوز مظالم کے باوجود جموں کشمیر کے عوام کے جذبۂ حریت میں کوئی کمی نہ آسکی۔ انہوں نے کہا کہ حقِ خودارادیت کی مبنی برحق تحریک ہماری چوتھی نسل میں منتقل ہوکر نئے حوصلوں اور ولولوں کے ساتھ اپنے منطقی انجام کی جانب رواں دواں ہے۔

حریت رہنما سید علی شاہ گیلانی نے کشمیری حریت پسند عوام کے تحریکی جذبات کو خراج تحسین ادا کرتے ہوئے کہا کہ مجھے پوری اُمید ہے کہ ہماری مظلوم قوم بھارت کے فوجی طاقت اور استبدادی حربوں سے مرعوب نہیں ہوجائے گی، بلکہ اپنی بیش بہا قربانیوں کی از خود حفاظت کرتے ہوئے کسی بھی لیڈر یا جماعت کو ان قربانیوں کے ساتھ غداری کرنے اور ان پر عیش و عشرت کے محل خانے تعمیر کرنے کی اجازت نہیں دے گی۔ سید علی شاہ گیلانی نے بالخصوص نوجوان نسل سے دردمندانہ اپیل کرتے ہوئے کہا کہ وہ قرآن اور سنت کا تحقیقی مطالعہ کرکے اسلام کے خلاف ہو رہی مسموم سازشوں کو سمجھنے اور انہیں ناکام بنانے کی ہر ممکن کوشش کریں۔ انہوں نے کہا کہ آپسی اتحاد، بھائی چارے اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کو ملحوظ نظر رکھتے ہوئے اپنے تحریکی صفوں میں کالی بھیڑوں کو جائے پناہ فراہم کرنے سے اجتناب کریں۔

سید علی شاہ گیلانی نے مسئلہ کشمیر کو ایک سیاسی اور انسانی مسئلہ قرار دئے جانے کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ اِسے طاقت کے بے تحاشا استعمال اور جبر و اکراہ کی پالیسیوں سے حل نہیں کیا جاسکتا۔ انہوں نے کہا کہ ضرورت اس امر کی ہے کہ بھارت جبر و استبداد کی روائتی پالیسیوں کو ترک کرکے مسئلہ کشمیر جیسے متنازعہ سیاسی مسئلے کو اقوامِ متحدہ کی تسلیم شدہ قراردادوں کو عملاکر ایک پُرامن اور منصفانہ حل تلاش کرنے کے لئے اپنی آمادگی کا اظہار کرے۔

About وائس آف مسلم

Voice of Muslim is committed to provide news of all sort in muslim world.

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

Read Next

ăn dặm kiểu NhậtResponsive WordPress Themenhà cấp 4 nông thônthời trang trẻ emgiày cao gótshop giày nữdownload wordpress pluginsmẫu biệt thự đẹpepichouseáo sơ mi nữhouse beautiful