کھٹوعہ سانحہ کے خلاف واشنگٹن میں احتجاج

۔ کھٹوعہ میں آٹھ سالہ معصوم بچی آصفہ کی اجتماعی آبروریزی اور بہیمانہ قتل کے خلاف واشنگٹن ڈی سی میں کشمیری لوگوں نے احتجاج کیا اور عالمی اداروں پر زور دیا کہ وہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالیوں کو بند کرائیں۔ احتجاجی مظاہرے میں شامل افراد نے ہاتھوں میں پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جن میں کھٹوعہ کی معصوم بچی کو انصاف فراہم کرنے کا مطالبہ درج تھا، انہوں نے عالمی اداروں، امریکہ اور دیگر یورپی ممالک پر زور دیا کہ وہ کشمیر میں بھارتی فورسز کی جانب سے گھروں کو نذر آتش کرنا اور نوجوانوں کو شہید کرنا جیسی کارروائیوں کا سنجیدہ نوٹس لیں۔ احتجاجی مظاہرے سے ورلڈ کشمیر ایورنیس فورم کے سیکرٹری جنرل غلام نبی فائی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کھٹوعہ میں آٹھ سالہ بچی کی آبروریزی اور بہیمانہ قتل نے نہ صرف جنوبی ایشاء کے لیڈران کو ہلا کر رکھ دیا ہے بلکہ پوری دنیا میں اس واقعے کی مذمت کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کٹھوعہ کی معصوم آصفہ کو پہلے اغواء کیا گیا اور بعد میں نشیلی ادویات دیکر اجتماعی عصمت دری کا شکار بنایا گیا۔ انہوں نے کہا کہ بچی کے قاتلوں نے عصمت دری کو صرف ڈرنے کے لئے انجام نہیں دیا بلکہ اس کے گجر سماج قبیلے کو علاقے سے باہر نکالنے کی کوشش کی ہے۔ انہوں نے اقوام متحدہ کے جنرل سیکرٹری کا بھی شکریہ ادا کیا جنہوں نے کٹھوعہ میں پیش آئے واقعے کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے قصورواروں کو سزا دینے کا مطالبہ کیا تھا۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کشمیر امریکی کونسل کے صدر پروفیسر امتیاز خان نے کہا کہ 8سالہ بچی کا معاملہ صرف ایک ہی واقعہ نہیں بلکہ کشمیر میں دس ہزار کشمیری خواتین کی عصمت پر حملہ کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ وہ تمام کیس دوبارہ کھول کر ایک غیر جانبدارنہ ایجنسی کے ذریعے تحقیقات کرانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ کنن پوش پورہ میں سات سالہ بچی سے لیکر ستر سالہ عورت کی عصمت لوٹی گئی اور اقوام متحدہ اور دیگر رضاکار تنظیموں کی جانب سے مسئلہ اٹھائے جانے کے باوجود بھی کوئی تحقیقات نہیں ہوئیں۔ تقریب سے آزاد کشمیر کے وزیراعظم کے مشیر سردار سرور خان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آٹھ سالہ بچی کے ساتھ پیش آئے واقعے سے ان ممالک کی آنکھیں کھل جانی چاہیئیں جو بھارتی فوج کو کھلی چھوٹ دیتے ہیں۔ انہوں نے امریکی انتظامیہ پر زور دیا ہے کہ بھارت اور پاکستان کو بات چیت کے میز پر لانے کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے۔ احتجاجی مظاہرے سے ڈاکٹر ظفر نوری، ڈاکٹر ذوالفقار کاظمی، ڈاکٹر ایم آئی دھر وغیرہ نے خطاب کیا۔

About A. H

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

Read Next

ăn dặm kiểu NhậtResponsive WordPress Themenhà cấp 4 nông thônthời trang trẻ emgiày cao gótshop giày nữdownload wordpress pluginsmẫu biệt thự đẹpepichouseáo sơ mi nữhouse beautiful