کیا آرمی چیف کو سانحہ ماڈل ٹاون کے دہشتگردوں کے چہرے نظر نہیں آرہے، طاہر القادری

عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری نے 14 افراد کے قتل کا انصاف نہ ملنے پر 17 جون کو مال روڈ پر دھرنے کا اعلان کرتے ہوئے آرمی چیف جنرل راحیل شریف سے انصاف کی اپیل کی ہے۔ لاہور پہنچنے پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے ڈاکٹر طاہر القادری کا کہنا تھا کہ 2014 میں سرکاری سرپرستی میں 14 جوانوں کو سرعام قتل کیا گیا لیکن دو سال گزرنے کے باوجود ہمیں انصاف نہیں ملا، 17 جون کو مال روڈ پر دھرنا دیں گے اور اپنے مطالبات بھی مال روڈ پر ہی پیش کریں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی 70 سالہ تاریخ میں ایسا قتل عام نہیں ہوا، واقعہ کے خلاف اسلام آباد میں دھرنے پر تھے تو پاک فوج کے سپہ سالار کی مداخلت پر معاملے کی ایف آئی آر درج کی گئی۔ عوامی تحریک کے سربراہ کا کہنا تھا کہ ماڈل ٹاؤن میں 17 جون کو حکمرانوں کی ایما پر پولیس نے ریاستی دہشت گردی کرتے ہوئے ہمارے جوانوں کو شہید کیا، ہمارے پاس درجنوں تربیت یافتہ سیکیورٹی گارڈ ہیں اگر ہمارا جوابی کارروائی کا ارادہ ہوتا تو 10 سے 20 پولیس کے جوان اور افسران کی لاشیں بھی اس دن گر جاتی لیکن ہمارے جوان اور بیٹیاں شہید ہوتے رہے لیکن قانون کو ہاتھ میں نہیں لیا۔

طاہر القادری نے کہا کہ آرمی چیف نے آپریشن ضرب عضب کے ذریعے دہشت گردوں کی کمر توڑی اور پھر نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد کر کے ملک بھر میں چھپے دہشت گردوں کا صفایا کیا، میرا ان سے سوال ہے کہ کیا انھیں 17 جون کے واقعہ میں دہشت گردوں کے چہرے نظر نہیں آ رہے، ان مظلوموں کو کہیں سے انصاف کی توقع نہیں کیونکہ حکمران خود قاتل اور خود ہی منصف ہیں لہذا پاک فوج کے سپ سالار سے کہتا ہوں کہ آپ نے ہی انصاف کے لئے پہلا قدم اٹھایا تھا اور اب آپ کو ہی انصاف دلانا ہو گا، اگر آپ انصاف دلائے بغیر چلے گئے تو پھر آپ کو اللہ کے حضور اس کا جواب دینا ہوگا۔

About وائس آف مسلم

Voice of Muslim is committed to provide news of all sort in muslim world.

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

Read Next

ăn dặm kiểu NhậtResponsive WordPress Themenhà cấp 4 nông thônthời trang trẻ emgiày cao gótshop giày nữdownload wordpress pluginsmẫu biệt thự đẹpepichouseáo sơ mi nữhouse beautiful