گلگت بلتستان اور قومی اخبارات

میں آپ کے اس کثیرالاشاعت اخبار کی وساطت سے مقتدر حلقوں،الکٹرانک اور پرنٹ میڈیا کے مالکان ،صحافی برادری،صاحبانِ عقل و فہم اور زوقِ مطالعہ و اخبارنویسوں کی توجہ اس انتہائی اہم مسلے کی جانب راغب کر وانا چاہتا ہوں کہ گلگت بلتستان ،جو کہ پڑھا لکھا اور مہذب و مہمان نواز اور سیر و سیاحت کے حوالے سے عظیم ترخطہ کہلاتا ہے ،میں کافی عرصے سے پاکستان کے بڑے بڑے اورقومی سطح کے اخبارات جن میں دنیا،ایکسپرس،جنگ اور Dawn نیوز وغیرہ شامل ہیں، کی ترسیل کا فقدان و بحران پیدا ہوا ہے۔ گلگت بلتستان شرح خواندگی کے حوالے سے لگ بھگ تقریباً سو فیصد کے قریب ہے اور زوقِ مطالعہ و علم کی پیاس بجانے میں طلبہ وطالبات پاکستان سمیت دنیا بھر کے مختلف کالجوں اور جامعات میں پھیلے ہوئے ہیں۔اس کے علاوہ مقابلے کا امتحان سی ایس ایس،پی ایم ایس اور پی سی ایس جیسے بڑے امتحانات میں حصہ لینے والے امیدواروں کی ایک کثیر تعداد کا تعلق بھی گلگت بلتستان سے ہو تا ہے۔ لہٰذا علم اور تعلیم کے اس گلشن میں بڑے اور قومی سطح کے اخبارات کی ترسیل و اشاعت نہ ہونا لمحہ فکریہ سے کم نہیں۔
صحافت کسی بھی ریاست کا چوتھا ستون گردانا جاتا ہے اور اخبارات و رسائل اور جریدے ملکی و بین الاقوامی سطح کے خبروں، تجزیوں، تبصروں سمیت معلومات اور ادب کے بیش بہا خزانوں سے بھر ے پڑے ہوتے ہیں۔اوریہ علمی خزانے پرنٹ میڈیا کے زریعے ہی عوام تک پہنچتے ہیں۔جن کے مطالعے سے عوام میں شعور،فہم و فراست،زہنی پختگی و مظبوطی اورفکری بلندی پیدا ہوجاتی ہے۔مگر ستم ظریفی کی بات ہے کہ زوقِ مطالعے میں ڈوبا ہوا یہ خطہ ان بیش بہا قیمتی خزانوں سے یکسر محروم و فراموش ہے۔جس کے سبب طالب علم،اخبار نویس اور لکھاری حضرات در بہ در کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہیں۔ گلگت بلتستان میں قائم امن و امان کی بدولت اس وقت سیر و سیاحت کے شوقین اور دلدادہ ملکی و غیر ملکی سیاحوں نے اس علاقے کے جنت نظیر وادیو ں اور علاقوں کو اپنا مسکن و جنت بنا لیا ہے۔جو قومی اور بین الاوقوامی سطح کے اخبارات و خبروں کی کیمیابی و نایابی سے برابر پریشان ہیں۔
کافی عرصے سے پاکستان کے بڑے اور قومی اخبارات کی تر سیل گلگت بلتستان میں بوجہ روک دی گئی ہے ۔ جس کی وجہ سے ا س علاقے کے پڑھے لکھے عوام ملکی اور بین الاقوا می سطح کے خبروں اور معلومات کے نہ ملنے کے سبب مرکزی دھارے سے قدرے دور اور بتدریج کٹتے چلے جارہے ہیں۔بہ ایں ہمہ عام اور خاص علمی ،فکری ،اور نظریاتی طورپر سمت کا تعین کھو رہے ہیں۔اور جہالت کے مہیب سائے سادہ لوح عوام کے سروں پر منڈٖلا رہے ہیں۔
ہوناتو یہ چاہیے کہ اس علمی اور ادبی خطے میں بڑے اور قومی اخبارات کا اپنا پرنٹنگ پریس اور دفاتر قائم ہوں۔جہاں سے بیک وقت ملک کے دیگر علاقوں اور شہروں کی طرح روزانہ کی بنیادوں پر یہاں بھی ہاتھوں ہاتھ اخبارات دستیاب ہوں۔مگر پہلے کی طرح دو یا تین دنوں کے تاخیر سے ملنے والے قومی اخبارات کی ترسیل بھی اب بند ہو چکی ہے ۔جس کی وجہ سے گلگت بلتستان کے پڑھے لکھے طبقے ،اخبار نویس و کالم نویس اور حلقہ اربابِ زوق(حاذ) ،اہم اور قیمتی قومی و بین الاقوامی سطح کے خبروں اور معلومات سے محروم ہو گئے ہیں۔جس کی وجہ سے علاقے میں فکری و شعوری پسماندگی اور معلوماتی بہتات کا بحران سر اٹھانے لگا ہے۔گلگت بلتستان کے مقامی اخبارات میں چند ایک علاقائی اور کبھی کبھار قومی و بین الاقوامی سطح کی سر خی کے علاوہ اور کو ئی اہم خبر یا علمی و فکری سطح کی کوئی چیز نظر نہیں آتی۔جس کے سبب اس علاقے کے رشد کرتے ہو ئے ازہان و افکار جمود کا شکار ہو نے لگے ہیں۔تفکر و تخیل ماند پڑتا جارہا ہے ۔جس کی بیخ کنی کے لیے علمی خزانوں سے بھرے ہوئے اخبارات و رسائل کی بھر وقت ترسیل کو ممکن بنانا ازحد ضروری ہے۔ ان اخبارات و رسائل کے مدیرانِ اعلیٰ اور کالم نگار وں کے حالا تِ حاضرہ اور قومی سطح کے اہم موضوعات پر اپنے امیق تجربے کی روشنی میں پیش کیے گیے آرا،تجزیے،تبصرے اور تحریروں کے مطالعے سے زہنوں کے وسعتو ں کو رشد ملتی ہے فصاحت او ربلاغت و متانت میں اظافے کے ساتھ ساتھ قوت تخیل و تفکر اور زوقِ مطالعہ بھی مضبوط ہو جاتا ہے۔
لہٰذا ضرورت اس امر کی ہے کہ صوبائی اور وفاقی حکومتوں کے ساتھ ساتھ اخبار مالکان کو بھی چاہیے کہ فلِ فور گلگت بلتستان میں قومی اخبارات کی بر وقت تر سیل کو ممکن بنایا جا ئے تاکہ اس خطے کے طالب علم ،اخبار نویس ،کالم نگار ،حلقہ ارباب زوق،سیاح اور ہر عام و خاص قومی اور بین الاقوامی سطح کے خبروں اور علمی معلومات سے مستفید ہو سکیں اورمرکزی دھارے سے جڑھتے ہوئے مملکتِ خداداد پاکستان کی تعمیر و ترقی میں اپنا کردار ادا کر سکیں۔

( یاور عباس ہولہ نگری ،گلگت بلتستان) 

About VOM

Voice of Muslim is committed to provide news of all sort in muslim world.

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

Read Next

ăn dặm kiểu NhậtResponsive WordPress Themenhà cấp 4 nông thônthời trang trẻ emgiày cao gótshop giày nữdownload wordpress pluginsmẫu biệt thự đẹpepichouseáo sơ mi nữhouse beautiful