تازہ ترین
روسی حکومت کی سربراہی میں ہیکرز نے دنیا بھر کے حساس کمپیوٹر راؤٹرز کو متاثر کیا، برطانیہ اور امریکہ کا الزاماسلام ٹائمز۔ امریکی اور برطانوی حکام نے الزام لگایا ہے کہ روسی حکومت کی سربراہی میں ہیکرز نے سائبر جاسوسی مہم چلائی ہے، جس میں حکومتی ایجنسیز، کاروبار اور اہم معلومات پر نظر رکھنے والوں کو ہدف بناتے ہوئے دنیا بھر کے کمپیوٹر راؤٹرز کو متاثر کیا۔ امریکا اور برطانیہ کے حکام نے ایک کانفرنس کے دوران صحافیوں کو بتایا کہ انہوں نے ان حملوں کے حوالے سے مشترکہ انتباہ جاری کرنے کا منصوبہ بنایا ہے جس کا مقصد ان راؤٹرز، جو انٹرنیٹ کے انفرا اسٹرکچر کو سائبر جاسوسی مہم کا نشانہ بنا رہے ہیں، کو مستقبل کے لیے خبردار کرنا ہے۔ وائٹ ہاؤس کے سائبر سیکیورٹی کے کوآرڈینیٹر روب جوئس کا کہنا تھا کہ ہم جب سائبر سرگرمیوں میں دخل اندازیاں دیکھتے ہیں، چاہے وہ مجرمانہ یا دیگر قومی ریاستی اداروں کی سرگرمیاں ہوں، اس میں فوری مداخلت کی کوشش کرتے ہیں۔ خیال رہے کہ وائٹ ہاؤس نے فروری کے مہینے میں روس پر 2017 کے دوران سائبر حملہ کرنے کا الزام لگایا تھا اور برطانوی حکومت کے ساتھ مل کر روس کو یوکرین کے انفرا اسٹرکچر میں در اندازی اور عالمی طور پر کمپیوٹرز کو نقصان پہنچانے کی مذمت کی تھی۔ امریکا کے خفیہ اداروں نے نتیجہ اخذ کیا تھا کہ ماسکو نے 2016 کے صدارتی انتخابات میں دخل اندازی کی تھی اور وفاقی استغاثہ اس معاملے پر تحقیقات کر رہا ہے کہ گویا ڈونلڈ ٹرمپ کی مہم میں ووٹ حاصل کرنے کے لیے روسیوں کی خدمات حاصل کی گئی تھیں یا نہیں۔ واضح رہے کہ ماسکو اور ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے ان الزامات کو مسترد کردیا گیا تھا۔ امریکا اور برطانوی حکومت کا کہنا تھا کہ انہوں نے اس حوالے سے گزشتہ روز مشترکہ رپورٹ شائع کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس میں حملوں کے حوالے سے تکنیکی معلومات دی جائیں گی تاکہ اداروں کو یہ معلوم ہوسکے کہ انہیں ہیک کیا گیا ہے اور مستقبل میں ایسے حملوں سے بچنے کے لیے پیشی اقدام اٹھا سکیں۔ حکومت نے متاثرین سے اس حوالے سے رپورٹ بھی طلب کی ہے تاکہ وہ اس مہم سے پڑنے والے اثرات کو بہتر طریقے سے سمجھ سکیں۔ امریکا کے ہوم لینڈ سیکیورٹی ڈپارٹمنٹ کے سائبر سیکیورٹی کے حکام جینیٹ مانفرا کا کہنا تھا کہ ہمیں سائبر حملے سے ہونے والے نقصان کے حوالے سے مکمل معلومات نہیں ہیں۔ امریکی اور برطانوی حکام نے خدشہ ظاہر کیا تھا کہ متاثرہ راؤٹرز کو مستقبل میں خطرناک سائبر آپریشنز کے لیے بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔

یمن سے امریکہ کو خطرہ ہے، اسی لئے امریکہ نے یمن کیخلاف سعودی عرب کو اکسایا اور جنگ مسلط کروائی

 کراچی: منہاج القرآن علماء کونسل کراچی کے صدر علامہ سید محمد مسعود شاہ ترمذی قادری کا خبر رساں ادارے کو انٹرویو دیتے کہناتھا کہ   بنیادی طور پر داعش امریکہ کی پیدا کردہ ایک تنظیم ہے، جس طرح طالبان کو امریکہ نے پیدا کیا تھا اور پھر انہیں طالبان کے خلاف کارروائی کی تھی، بالکل اسی طرح داعش بھی امریکی پیداوار ہے، جو دہشتگردوں پر مشتمل ہے، پاکستان عوامی تحریک کا مؤقف بالکل واضح ہے کہ قبلہ قائد انقلاب ڈاکٹر محمد طاہر القادری نے اس حوالے سے دہشتگردی اور خوارج کے خلاف گیارہ سو صفحات پر مشتمل فتویٰ جاری کیا ہے، جو دہشتگردی کے خلاف ایک مستند ترین دستاویز ہے، جسے دنیا کی تقریباً تمام زبانوں میں شائع کیا جا چکا ہے، اس میں ڈاکٹر طاہر القادری نے خصوصی طور پر داعش کا بھی ذکر کیا ہے، یہ ایک دہشتگرد تنظیم ہے، جن کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں، انہوں نے صرف اسلام کا لبادہ اوڑھا ہوا ہے، جس کی آڑ میں داعش مسلم ممالک میں دہشتگردی کر رہی ہے اور مسلمانوں کو آپس میں دست و گریباں کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔  میں سمجھتا ہوں کہ افغانستان میں عوام داعش کی سازش کو سمجھتے ہیں، افغان عوام کسی صورت داعش کو برداشت نہیں کرینگے، اس کے ساتھ ساتھ افغان طالبان بھی داعش کو برداشت نہیں کرینگے، افغان طالبان خود دہشتگرد نہیں ہیں، بلکہ امن پسند ہیں، وہ اپنے علاقوں میں داعش کا پروان چڑھنا کبھی برداشت نہیں کرینگے، البتہ امریکہ اپنی سرپرستی میں داعش کو فعال کروا سکتا ہے، کیونکہ سب سے بڑا دہشتگرد تو خود امریکہ ہے اور یہی امریکہ دنیا بھر میں داعش سمیت تمام دہشتگرد گروہوں کی سرپرستی کر رہا ہے، دنیا میں جہاں جہاں دہشتگردی ہو رہی ہے، اس کے پیچھے امریکہ ہے، امریکہ داعش سمیت تمام دہشتگرد گروہوں کو اسلحہ بھی فراہم کرتا ہے، مالی سپورٹ بھی دیتا ہے، بہرحال ہمیں پاکستان کو داعش سے بچانا ہے، اس حوالے سے ہمیں افواج پاکستان پر پورا بھروسہ ہے کہ وہ پاکستان میں داعش کا داخلہ روکے گی۔

ایک سوال کے جواب میں انکا کہنا تھا کہ داعش کی پاکستان آمد کی روک تھام، اس حوالے سے پاک افغان سرحد کی کڑی نگرانی و حفاظت بہتر طریقے سے ہماری سکیورٹی فورسز ہی کرسکتی ہیں۔ آپریشن ضرب عضب کے بعد پاک فوج جس طرح ملک بھر میں آپریشن ردالفساد کے تحت کارروائیاں کر رہی ہے، اس تناظر میں ہمیں توقع ہے کہ پاک افغان سرحد سے داعش پاکستانی علاقوں میں داخل نہیں ہوسکتی، کیونکہ پاک افغان سرحد پر افواج پاکستان کی نگرانی بہت سخت ہے، سکیورٹی کے اعتبار سے وہ کسی بھی قسم کی رعایت نہیں برتتے، تو پاک افغان سرحد سے داعش کا راستہ ممکن نہیں ہے، البتہ یہ ممکن ہے کہ امریکی سازش اور پالیسی کے تحت داعش کو کسی اور ذرائع سے پاکستان میں داخل کرایا جائے، وہ الگ بات ہے، لیکن ہماری ملکی انٹیلی جنس اتنی غافل نہیں ہے کہ داعش آسانی کے ساتھ پاکستان میں داخل ہو جائے اور پاکستان میں دہشتگردانہ کارروائیاں انجام دے سکے۔

 پاکستان عوامی تحریک اس بات کے حق میں بالکل نہیں ہے کہ فوج کو سعودی عرب بھیج کر یمن جنگ میں جھونک دیا جائے، یمن جنگ سعودی بادشاہت کی ذاتی مفادات کی جنگ ہے، وہ کسی مذہبی یا بین الاقوامی مفاد کی خاطر جنگ نہیں ہے، یمن پر مسلط سعودی جنگ ظلم ہے، یمن پر حملہ کرکے مسلمانوں کا قتل عام کیا جا رہا ہے، جو سعودی عرب امریکہ کے کہنے پر کر رہا ہے، دراصل یمن سے امریکہ کو خطرہ ہے، اسی لئے امریکہ نے یمن کے خلاف سعودی عرب کو اکسایا اور جنگ مسلط کروائی اور اب یمن پر سعودی جنگ کیلئے مسلم ممالک سے تعاون مانگا جا رہا ہے، لہٰذا پاکستان عوامی تحریک کا بالکل واضح مؤقف ہے کہ پاکستان کو کسی بھی صورت یمن پر مسلط سعودی جنگ کا حصہ نہیں بننا چاہیئے، ہمیں یہ بات قطعاً برداشت نہیں کہ پاک فوج کو یمن جنگ میں جھونکا جائے، ہم اس کے خلاف ہیں۔

علامہ سید محمد مسعود شاہ ترمذی قادری نے مزید کہا کہ افواج پاکستان کی ناصرف ملکی بلکہ عالمی حالات پر بھی انتہائی گہری نظر ہے، ہماری پاک فوج کو انتہائی حساس عالمی صورتحال کا بخوبی اندازہ ہے، میرا خیال ہے کہ افواج پاکستان کبھی بھی یمن جنگ کا حصہ بننے کیلئے فوجیوں کو سعودی عرب نہیں بھیجے گی۔

About وائس آف مسلم

Voice of Muslim is committed to provide news of all sort in muslim world.

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

Read Next

ăn dặm kiểu NhậtResponsive WordPress Themenhà cấp 4 nông thônthời trang trẻ emgiày cao gótshop giày nữdownload wordpress pluginsmẫu biệt thự đẹpepichouseáo sơ mi nữhouse beautiful