سعودی عرب اقوام متحدہ کی کونسل برائے انسانی حقوق کے اجلاس میں قابل تعریف ملک ٹھہرگیا

جینیوا میں اقوام متحدہ کونسل برائے انسانی حقوق کے اجلاس میں شریک 99 مندوبین میں سے 75 ممالک کے مندوبین نے سعودی عرب کے انسانی حقوق کے ریکارڈ کی تعریف کرڈالی۔ تعریف کرنے والوں میں اسلامی جمہوریہ پاکستان، سوشلسٹ وینزویلا اور کمیونسٹ چین بھی شامل ہیں۔

اقوام متحدہ کی کونسل برائے انسانی حقوق کے ریویوسیشن میں سعودی عرب میں انسانی حقوق کی صورت حال پہ غور و فکر ہوا تو چین نے سعودی عرب کی تعریف کی اور سعودی وژن برائے 2030ء کو سعودی حکومت کا بڑا کارنامہ قرار دیا۔

سوشلسٹ ملک وینزویلا نے ‘عورتوں کو بااختیار’ بنانے پہ سعودی عرب کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ وہاں پہ صنفی برابری کے میدان میں قابل تحسین کام ہورہا ہے۔
یو اے ای نے سعودی عرب میں انسانی حقوق کو مین سٹریم کرنے پہ سعودی حکومت کی تعریف کی۔
یمن کی کٹھ پتلی حکومت کے نمائندہ وفد نے بھی سعودی عرب کے انسانی حقوق کے میدان میں اچھے ریکارڈ کو غیرمعمولی قرار دیا۔

ملیشیا نے بھی عورتوں کی ترقی اور ان کو بااختیار بنانے میں سعودی عرب کی تعریف کی ۔ فلسطین اتھارٹی کے وفد نے بھی سعودی عرب کے انسانی حقوق کی بہتری کے لیے اٹھائے جانے والے اقدامات کو سراہا۔
باقی ماندہ 21 ممالک میں سے صرف نو ممالک بشمول آسٹریلیا، آسٹریا، برطانیہ، کینڈا، ڈنمارک، فرانس، آئیلینڈ، سالونیا اور سوئٹزلینڈ نے سعودی عرب کے انسانی حقوق کے ریکارڈ کو بدتر قرار دیا۔

ہیومن رائٹس واچ نے یمن میں سعودی عرب کی وحشیانہ اور مجرمانہ بمباری کوانسانیت کے خلاف بھیانک اور ہولناک جرائم میں شمار کرتے ہوئے کہا ہےکہ یمن میں سعودی عرب کی وحشیانہ جنگ انسانیت کے خلاف جنگ ہے۔

About وائس آف مسلم

Voice of Muslim is committed to provide news of all sort in muslim world.

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

Read Next

ăn dặm kiểu NhậtResponsive WordPress Themenhà cấp 4 nông thônthời trang trẻ emgiày cao gótshop giày nữdownload wordpress pluginsmẫu biệt thự đẹpepichouseáo sơ mi nữhouse beautiful